محفوظات برائے November, 2016

PostHeaderIcon ۔۔۔ البم .. حمد،نعت،سلام

11091466_1126507984031073_2553812474608601781_n

PostHeaderIcon کیسے عجیب دکھ تھے،دل میں چھپا کے لائے

sunaa-ky-laiy
کیسے عجیب دکھ تھے،دل میں چھپا کے لائے
گردِ سفرتھی رہ میں ،بس ہم اٹھا کے لائے

ہر رہ گزرپہ اُس کو رکھنا تھا یاد سو ہم
انجان راستوں میں، خود کو بھلا کے آئے

جیون کی دھوپ میں یوں تنہا سفر تھا اپنا
سکھ سب کو بانٹ ڈالے، بس دکھ اٹھا کے لائے

اپنے تھے یا پرائے لہجوں میں بس چبھن تھی
مسکان اپنے لب پر پھر بھی سجا کے لائے

پڑھتا نہیں ہے کو ئی پھر بھی لکھا ہے ہم نے
سنتا نہیں ہے کو ئی لیکن سنا کے آئے

اس واسطے تو شا ہیں مری روح جل رہی ہے
جیون کی آگ میں ہم خود کو جلا کے آئے
ڈاکٹر نجمہ شاہین کھوسہ

My Facebook
Facebook Pagelike Widget
Aanchal Facebook
Facebook Pagelike Widget
تبصرہ جات
Total Visits: Total Visits